چائنہ نے پاکستان کو کونسا میزائل سسٹم دیدیا ؟

کسی بھی ممکنہ بھارتی جارحیت کو روکنے کے لئے فضائی اور زمینی حدود کی حفاظت کے لیے پاکستان نے نیا ایئر ڈیفنس سسٹم حاصل کرلیا یہ ڈیفنس سسٹم چین نے پاکستان کی فضائی حدود کو مضبوط بنانے کے لیے لیے دیا ہے اس سسٹم کا نام آئی ایل وائے 80 ہے پاکستان اور چین کے درمیان ہونے والے معاہدے کے تحت تحت چین نے ایل وائی80 ای مجال ڈیفنس سسٹم کی کل نو بیٹری فراہم کی ہے جنہیں پاکستان اور بھارت کے درمیان سرحد پر نصب کیا جائے گا گا اس کی خاصیت یہ ہے کہ یہ مرض میں زمین سے ہوا میں مار کرنے والے ہر طرح کی میزائل کو مار گرا سکتا ہے

اس کے ساتھ سسٹم میں ایک نگرانی کرنے والا ریڈار میں شامل ہے اور اس کے ساتھ ایک ڈرون بھی ہے جبکہ ریڈار کے 5 یونٹ اس کا حصہ ہے میزائلوں اور ریڈار کے علاوہ پاکستان نے چینی ساختہ رین بو سی ایچ 4 اور رین بو سی ایچ 5 ڈرون بھی سرحد پر تعینات کیے ہیں تاکہ بھارت کے کسی بھی جہاز کی آمد کا پیشگی پتہ لگایا جا سکے۔رین بو سی ایچ 4 اور رین بو سی ایچ 5 ڈرون جو کہ چینی ساختہ ہے وہ بھی پاکستان کے سرحد پر تعینات کئے جائے گے اس کی خوبی یہ ہے کہ اس کی وجہ سے کسی بھی جہاز کی پیشگی آمد کا پتا چلایا جا سکتا ہے یہ میزائل ڈیفنس سسٹم دنیا کا جدید ترین سسٹم جانا جاتا ہے پاکستان کے لیے اسسٹنٹ کا حصول ایک نایاب تحفہ ہے جس کے بعد بہارت پاکستان کے خلاف کسی بھی قسم کی جارحیت اور سرحدی خلاف ورزی کا تصور بھی نہیں کرسکے گا بھارت کے لیے پاکستان کی حدود کی خلاف ورزی کرنا تقریباً ناممکن ہو چکا ہے

کیا ماہرہ خان نے اپنے بوائے فرینڈ سلیم کریم کے ساتھ منگنی کر لی ہے ؟ وہ تصویر جس نے ہر طرف ہنگامہ برپا کر دیا

انقرہ (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان بین الاقوامی شہرت کی مالک ہیں اور بالی ووڈ میں شارخ خان کے ساتھ فلم ” رئیس “ نے ان کے کیریئر کوچار چاند لگا دیئے تاہم اس کے علاوہ وہ کئی قسم کے تنازعات میں بھی گھری رہیں جہاں انہیں سخت تنقیدکا بھی سامنا رہاہے جیسا کہ ان کی ایک تصویر بیرون ملک سے رنبیر کپور کے ساتھ وائرل ہوئی تھی تاہم اب ان کی اپنے مبینہ بوائے فرینڈ سلیم کریم کے ساتھ تصویر وائرل ہو گئی ہے ۔

بھارتی ویب سائٹ ” پنک ولا“ نے ایک رپورٹ شائع کی ہے جس میں موضوع بحث ماہرہ خان کی مبینہ بوائے فرینڈ سلیم کریم کے ساتھ بنائی گئی تصویر ہے اور ساتھ دعویٰ کیا گیاہے کہ پاکستانی اداکارہ کی اپنے بوائے فرینڈ کے ساتھ منگنی کی افواہیں گرم ہیں تاہم اداکارہ کی جانب سے اس حوالے سے کوئی تردید یا تصدیق سامنے نہیں آ سکی ہے ۔

انٹرنیٹ پر افواہیں گردش کر رہی ہیں کہ ماہرہ خان نے دوسری مرتبہ اپنا گھر بسانے کا فیصلہ کر لیاہے اور انہوں نے اپنے بوائے فرینڈ سلیم کریم کو زندگی کا ساتھی چنا ہے جبکہ یہ دعویٰ بھی کیا جارہاہے کہ انہوں نے ترکی میں ایک دوسرے کو انگوٹھیاں بھی پہنا دی ہیں۔پنک ولا نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیاہے کہ اس تقریب میں فیملی اور قریبی لوگوں نے ہی شرکت کی ہے تاہم ماہرہ کی جانب سے ابھی تک اس کی تردید یا تصدیق نہیں کی گئی ہے ۔

تفصویر میں دیکھا جا سکتاہے کہ ماہرہ خان نے سفید رنگ کا انتہائی خوبصورت لباس زیب تن کیا ہواہے جبکہ سلیم کریم نے کالے رنگ کا سوٹ پہن رکھا ہے اور دونوں نہایت خوبصورت دکھائی دے رہے ہیں ۔دوسری جانب پاکستان کی نیوزسائٹ ” دی نیوز “ نے دعویٰ کیاہے کہ یہ تصویر ایک پارٹی کی ہے جس میں دونوں کو ایک ساتھ ڈانس کرتے ہوئے دیکھا گیاہے تاہم ماہرہ خان کی جانب سے اس حوالے سے بیان کا انتظار کیا جارہاہے ۔

یاد رہے کہ ماہرہ خان نے 2007 میں علی عسکری سے شادی کی تھی اور ان دونوں کا ایک بیٹا بھی ہے جس کانام اذلان ہے تاہم آپسی اختلافات کے باعث جوڑے نے 2015 میں علیحدگی کا فیصلہ کر لیا تھا اور اس کے بعد سے ماہرہ خان نے شادی نہیں کی ۔

مودی صرف الیکشن میں،پاکستان ہر روز سر چڑھ کر بولتا ہے،تیج بہادر نے کھری کھری سنا دیں

نئی دہلی(این این آئی)عام انتخابات میں بھارتی وزیراعظم کو چیلنج کرنے والے بھارتی سیکورٹی فورس کے سابق اہلکار تیج بہادر نے کہاہے کہ پاکستان ہر روز سر چڑھ کر بولتا ہے اور مودی صرف الیکشن کے وقت بولتے ہیں۔برطانوی نشریاتی ادارے سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ وزیراعظم نریندر مودی اپنی انتخابی مہم میں دعوی کررہے ہیں۔ ان کے دور میں ملک میں سکیورٹی کی صورتِ حال بہتر ہوئی ہے اگر ایسا ہے تو پلوامہ کا حملہ کیسے ہوا؟ تیج بہادر نے کہا کہ اس حملے کی تحقیقات کیوں نہیں کروائی گئی،انہوں نے کہاکہ وہ مودی سے پلوامہ حملے پر سوال کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر حالات اتنے ہی اچھے ہیں تو اتنے سارے جوان میری انتخابی مہم کی حمایت کیوں کر رہے ہیں۔ تیج بہادر کا کہنا تھاکہ997جوانوں نے خود کشی کی ہے لیکن یہ بتاتے نہیں، ہ

مارے پاس اعداد و شمار ہیں،775جوان ہلاک ہوئے ،ویڈیو شیئر کرنے کے بارے میں انہوں نے کہاکہ انھوں نے بھروسے کے ساتھ یہ ویڈیو پوسٹ کی تھی کیونکہ انہیں اور ان کے ساتھیوں کو لگتا تھا کہ انہیں ایک اچھا وزیراعظم مِلا ہے جو بار بار عوام سے اپیل کرتا ہے کہ آپ میرا ساتھ دیں اور میری مدد کریں۔تیج بہادرنے کہاکہ نوٹ بندی کے دوران گوا میں ایک ریلی میں انھوں نے چھاتی پیٹ پیٹ کر کہا تھا کہ نہ کھائوں گا اور نہ کھانے دوں گا ۔ ہم نے سوچا ہمارا وزیراعظم اتنا کام کر رہا ہے تو ہمیں بھی اپنی بات رکھنی چاہیے۔ ہم نے اس بھروسے ویڈیو پوسٹ کی کہ وزیراعظم ان کی مدد کریں گے۔ لیکن ملا کیا مجھے برخاست کر دیا گیا۔انھوں نے کہاکہ میں تسلیم کرتا ہوں کہ ویڈیو شیئر کر کے میں نے فوجی ضابطوں کی خلاف ورزی کی تھی لیکن میرا جو اپنا فنڈ ہے

وہ تو مجھے دے دو۔ اکیس سال جو میں نے فوج میں نوکری کی ہے اس کی پینشن تو دو اور اگر وہ بھی نہیں دیتے تو بدعنوان اہلکاروں کو تو سزا دو لیکن یہاں معاملہ الٹا ہے، جو بدعنوان ہیں انہیں تحفظ دیا جا رہا ہے اور جو آواز اٹھا رہا ہے اسے ختم کر دو، یہ ان کی پالیسی ہے۔تیج بہادر کا کہنا تھا کہ انتخابات میں حصہ لینے کے لیے انھوں نے تمام پارٹیوں کو خط لکھا تھا جس کے بعد سماج وادی پارٹی کی جانب سے انہیں فون آیا اور انہیں امیدار بنا دیا گیا۔