محبت حاصل کرنے لے لیے

اگر میاں بیوی میں سے کوئی ایک یہ عمل کرلے تو دونوں میں اتنی محبت پیدا ہو جائے گی کے اس کی مثال کہیں بھی نہیں ملے گی ۔۔۔۔۔۔۔دوستوں یہ عمل میاں بیوی کے درمیاں محبت کے لیے اٹیم بم ہے۔ جو دونوں میں بے مثال محبت پیدا کر دے گیا ۔۔اگر بیوی شوہر سے ناراض ہے تو شوہر یہ عمل کرے اور شوہر بیوی سے ناراض ہے تو بیوی ہے عمل کرے گھویولوں معلومات میں ناراضی ہوتی رہتی ہیں ۔۔۔اگر اس طرح کا کوئی مسئلہ ہو تو دو یہ تین دن کے اندر اندر سے کو حل کر لینا چاہیے۔

کوئی کے شرعات میں دو سے تین دن تک ناراض رہ سکتے ہیں دوستوں ان چیزوں کو دیکھتے ہوئے میں آپ لوگوں کے لیے یہ عمل لے کر آیا ہوں ۔۔۔۔جو عمل آج ہم آپ کو بتانے جارہے ہیں یہ میاں بیوی میں بہت محبت پیدا کرتی ہے

روزانہ سورہ النساء کی تلاوت کرے اس سے شوہر کو بیوی سے اور بیوی کو شوہر سے بے حد محبت ہو جائے گی

اوّل و آخر درود شریف پڑھنے

اہل مغرب نے اسلام میں خواتین کے حقوق کے بارے میں بہت پروپیگنڈا کر رکھا ہے لیکن سچ تو یہ ہے کہ جس طرح کے حقوق اسلام نے خواتین کو دیئے ہیں اس کا تصور دنیا کے کسی اور مذہب میں نہیں پایا جاتا۔

قرآن و حدیث کی تعلیمات کو دیکھا جائے تو معلوم ہوتا ہے کہ بہترین خاوند اسی شخص کو قرار دیا گیا ہے جو اپنی اہلیہ کی تمام ضروریات اپنی حیثیت کے مطابق پوری کرتا ہے۔

اسلام میں عورت کے حقوق کا اس قدر خیال رکھا گیا ہے کہ مرد کے پاس یہ اختیار نہیں ہے کہ چاہے تو اپنی اہلیہ کے اخراجات اٹھائے اور چاہے تو اس پر ہی اِن کا بوجھ ڈال دے، بلکہ اس پر لازم کیا گیا ہے کہ وہ اپنی اہلیہ کے اخراجات کا مناسب طور پر اہتمام کرے،

البتہ اسے یہ گنجائش بھی دی گئی ہے کہ وہ اپنی بساط کے مطابق جتنا ممکن ہو خرچ کرے۔ خصوصاً جب کوئی خاتون بچے کی پرورش کر رہی ہو تو اس کی تمام ضروریات کا بہترین ممکن طور پرخیال رکھنے کا حکم دیا گیاہے۔

اسلام نے گھریلو مسائل کے بطریق احسن حل کے لئے یہ اصول بیان کر دیا ہے کہ محدود ذرائع والا خاوند اپنی اہلیہ پر اپنے محدود ذرائع کے مطابق اخراجات کرے اور جو صاحب حیثیت ہے اس پر لازم قرار دیا گیا ہے

کہ وہ اپنی حیثیت کے مطابق کھل کر خرچ کرے۔ یعنی مرد بخل سے کام نہ لے بلکہ جہاں تک اس کی گنجائش ہو اہلیہ کی جائز ضروریات کے لئے بخوشی خرچ کرے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *